آزربائیجان اور آرمینیا کے درمیان جھڑپیں، 300 سے زائد افراد ہلاک

آزربائیجان اور آرمینیا کے درمیان جھڑپیں، 300 سے زائد افراد ہلاک 101

آزربائیجان اور آرمینیا کے درمیان متنازع علاقے نگورنو کارا باخ میں جاری جھڑپوں میں مارے جانے والوں کی تعداد 300 زیادہ ہوگئی۔

ادھر ایرانی صدر حسن روحانی نے دونوں ممالک کی جنگ علاقائی جنگ میں بدلنے کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے فوری جنگ بندی کا مطالبہ کیا ہے۔

آرمینیا اور آذربائیجان کے درمیان جھڑپوں کا سلسلہ گیارہویں روز بھی جاری رہا۔

نگورنو کاراباخ کی وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ آذری فوج کے حملوں میں اس کے مزید 40 فوجی ہلاک ہوئے ہیں اور اب تک 3 سو سے زائد نگورنو کاراباخ فوجی ہلاک ہوچکے ہیں۔

روس کے صدر پیوٹن اور ایرانی صدر حسن روحانی نے دونوں ممالک سے جھڑپیں فوری ختم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

27 ستمبر سے جاری جھڑپوں میں دونوں طرف کے شہریوں اور فوجیوں سمیت 300 سے زائد افراد مارے جا چکے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں