بنگلہ دیش، خفیہ ایجنسی پر صحافی کے اہلخانہ کو ہراساں کرنے کا الزام

63

ڈھاکا(جنگ نیوز )بنگلادیش کی حکومت پر تنقید کی پاداش میں تسنیم خلیل کو انٹیلی جنس ایجنسی نے ہراساں کیا اور جب وہ اسے خاموش نہ کرا سکے تو ان کی والدہ پر دباؤ ڈالا کہ وہ اپنے بیٹے کو ملک مخالف تحریروں سے باز رکھیں۔ ملک میں صحافیوں، مخالفین اور سیاسی کارکنان کے خلاف ڈیجیٹل سیکورٹی قانون کے تحت حکومت پر تنقید کرنے کی بنا پر مقدمات چلائے جا رہے ہیں۔ صحافت کا وجود ہی نہیں ہے۔تسنیم خلیل جو اب سوئیڈن میں رہتے ہیں ، کہتے ہیں کہ وہ بنگلادیشی حکام کی بدعنوانیوں اور اختیارات کے ناجائز استعمال کے متعلق اپنے رپورٹرز کے کام کے ذریعہ عوام کو آگاہ کرتے ہیں۔وہ کہتے ہیں کہ حکام ان سے ناخوش ہیںانہوں نے میرے خاندان کو نشانہ بنایا ہے۔ اور میرے خاندان کو ہراساں کر کے مجھے ہراساں کرنے کی کوشش کی ہے۔حکومت نے ڈیجیٹل سیکورٹی کے کالے قانون کے تحت مجھ پر مقدمہ دائر کیا جس میں مجھ پر لگائے گئے الزامات مبہم ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں