تعلیمی ادارے اگلے ہفتے کھلنا شروع، سیکنڈری اسکولز، کالجز، یونیورسٹیاں15، مڈل اسکولز23 اور پرائمری30 ستمبر سے کھلیں گے، ایس او پیز لازم

تعلیمی ادارے اگلے ہفتے کھلنا شروع، سیکنڈری اسکولز، کالجز، یونیورسٹیاں15، مڈل اسکولز23 اور پرائمری30 ستمبر سے کھلیں گے، ایس او پیز لازم 146

سلام آباد (اے پی پی، مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی حکومت نے تعلیمی ادارے مرحلہ وار کھولنے کا اعلان کر دیا ہے۔

سیکنڈری اسکولز، کالجز، یونیورسٹیاں 15؍ ستمبر، مڈل اسکولز 23 ؍ ستمبر اور پرائمری 30؍ ستمبر سے کھلیں گے، ایس او پیز پر عملدرآمد لازمی کیا جائیگا، صوبہ پنجاب میں نصف بچے ایک دن، باقی نصف دوسرے دن بلائے جائیں گے۔

ڈبل شفٹ نہیں ہوگی، اداروں میں داخل ہوتے وقت اسکریننگ ہوگی، بچوں کو اسکول اور وین میں بھی ماسک پہننا ہوگا، کھانسی اور بخار والے بچوں کو اسکول نہ بھیجنے کی ہدایت کی گئی ہے، ایس او پیز کی خلاف ورزی پر حکومت تادیبی کارروائی کر سکتی ہے، کھانسی اور بخار والے بچوں کو ہر گز اسکول نہ بھیجا جائے۔

اسکولوں اور یونیورسٹیز میں ہر دو ہفتے بعد کورونا کے ٹیسٹ کئے جائینگے تاکہ کورونا پر نظر رکھی جائے۔ ان خیالات کا اظہار وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود اور وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے پیر کو نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر(این سی او سی) میں مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

دوسری جانب سندھ کے وزیر تعلیم سعید غنی کا کہنا ہے کہ اگر کسی اسکول یا علاقے میں کووڈ-19 کے کیسز میں اضافہ ہوا تو وہ اسکول یا متعلقہ علاقے کے تمام اسکولز بند کیے جاسکیں گے۔

پریس کانفرنس سے قبل وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود کی زیرصدارت ملک بھر میں تعلیمی ادارے کھولنے سے متعلق بین الصوبائی وزرائے تعلیم کا اجلاس ہوا جس میں وفاقی وزارت تعلیم اور صوبوں نے تعلیمی ادارے کھولنے سے متعلق تجاویز پیش کیں۔

پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے کہا کہ 13مارچ کو اسکول بند کرنے کا مشکل فیصلہ کیا تھا، کورونا کے دوران بچوں کے امتحانات لینا ناممکن تھا۔

حالات کا جائزہ لے کر تمام فیصلے کئے گئے تھے۔ انہوں نے کہا کہ ماہرین کی رائے، تھنک ٹینکس رپورٹ اور خطے کی صورتحال کا جائزہ لیا ہے، تعلیمی اداروں کو بتدریج کھولنے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نویں، دسویں، یونیورسٹیاں اور کالجز 15 ستمبر سے کھول دیئے جائیں گے، 15 ستمبر سے ہائر ایجوکیشن ادارے اور پروفیشنل ادارے کھول دیئے جائینگے۔

انہوں نے کہا کہ 23 ستمبر کو دوبارہ جائزہ لینے کے بعد 6ویں، 7ویں اور 8ویں جماعت کے طلباءکو بھی اجازت ہو گی، 30 ستمبر کو حالات کا جائزہ لینے کے بعد پرائمری اسکول کھولے جائینگے۔

انہوں نے کہا کہ صبرو تحمل اور تعاون پر تمام والدین کا مشکور ہوں۔ وفاقی وزیر نے کورونا وائرس کے دوران این سی او سی کے کردار کو بھی سراہا۔

وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے کہا کہ ملک میں کورونا کے حوالہ سے حالات تسلی بخش ہیں، تمام عوامل کو مدنظر رکھتے ہوئے فیصلہ کیا ہے کہ پہلے ہائر ایجوکیشن ادارے اور پھر چھوٹی کلاسز کھولی جائیں، یونیورسٹی اور کالجز لیب میں زیادہ رش سے گریز کیا جائے۔

اہم خبریں سے مزید

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں