کے پی حکومت کے ملازم کیخلاف زائد اثاثہ کیس کی سماعت ملتوی

کے پی حکومت کے ملازم کیخلاف زائد اثاثہ کیس کی سماعت ملتوی 51

سپریم کورٹ آف پاکستان نے خیبر پختون خوا حکومت کے گریڈ 14 کے ملازم کے خلاف آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس کی سماعت 2 ہفتوں کے لیے ملتوی کر دی۔

سپریم کورٹ آف پاکستان کے جسٹس عمر عطاء بندیال کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی۔

دورانِ سماعت جسٹس عمر عطاء بندیال نے استفسار کیا کہ سب اکاؤنٹنٹ کی 2 جائیدادیں اسلام آباد اور 2 پشاور میں کیسے ہیں؟

ملزم کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ تمام جائیدادیں ملزم کے بھائی کے نام پر ہیں۔

عدالتِ عظمیٰ نے سوال کیا کہ اس کیس کے 29 گواہان میں سے کتنے افراد کے بیانات قلمبند ہوئے؟

ملزم کے وکیل نے جواب دیا کہ 29 میں سے 4 گواہان کے بیانات اب تک قلمبند ہوئے ہیں۔

سپریم کورٹ آف پاکستان نے احتساب عدالت سے گواہان کے بیانات کے متعلق رپورٹ طلب کرلی اور کیس کی سماعت 2 ہفتے کے لیے ملتوی کر دی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں