پب جی پر پابندی، ایک اور بھارتی طالبعلم کی خودکشی

پب جی پر پابندی، ایک اور بھارتی طالبعلم کی خودکشی 131

آن لائن گیم پب جی کھیلنے کے عادی انجینئرنگ کے طالب علم نے ویڈیو گیم پر پابندی لگنے پر اپنی جان لے لی۔

بھارت میں پب جی گیم کھیلنے والے ایک اور نوجوان نے خودکشی کرکے اپنی زندگی کا خاتمہ کرلیا ہے، خودکشی کا یہ واقعہ بھارتی ریاست اندرا پردیش میں پیش آیا۔

بھارتی نوجوان کرن کمار پب جی کھیلنے کا اس قدر عادی تھا کہ اس نے ساڑھے لاکھ روپے بٹ کوائن کی صورت میں پب جی پر لگادئیے تھے جو اس نے اپنی والدہ سے ادھار لیے تھے جبکہ لیپ ٹاپ، موبائل فون و دیگر ذاتی جائیداد بھی پب جی کی خاطر داو پر لگا دی تھی۔

بھارتی نوجوان کے والدین کا کہنا ہے کہ ان کا بیٹا پانچ دن سے غائب تھا شروع میں ہمیں لگا کہ وہ اپنے دوست کے گھر گیا ہے جہاں وہ عموماً پب جی کھیلنے جاتا تھا لیکن جب دو دن تک کرن کمار کا کچھ پتہ نہیں چلا تو ہم پریشان ہوگئے۔

پانچ دن تک کرن کمار کہیں نہیں ملا تو اس کے گھر والوں اسے پورے گھر میں اپنے بیٹے کی تلاش شروع کی جس کے نتیجے میں پہلی منزل پر بنے چھوٹے سے اسٹور روم سے نوجوان کی لاش ملی

یاد رہے کہ کمار بی ٹیک کی تعلیم حاصل کررہا تھا اور آخری سال میں تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں